misa talpur article

گلگت بلتستان کی رسیلی چیری

جی تو جناب آج بات کرتے ہیں چیری کی۔ ہم میں سے میرے خیال سے کوئی ایسا نہیں ہوگا جس کو چیری پسند نہ ہو۔ اور اگر آپ نے پہاڑوں میں جاکر چیریاں نہیں کھائی تو پھر پہاڑوں میں گئے ہی کیوں۔۔۔



میں نے آج تک پہاڑوں میں کبھی بھی چیری خرید کر نہیں کھائی۔ ہمیشہ پیش کی گئی ہے پیار اور عزت کے ساتھ۔۔

آج میں آپ سے دو عدد ٹریلورز کے چھوٹے سے قصے شئیر کرتی ہوں۔

گلگت بلتستان کی رسیلی چیری

ٹریولر ایکس

ٹیولر ایکس جب خپلو پہنچا تو درخت پر لگی چیری کو بہت زیادہ حیرت سے دیکھتا رہا ۔ اللہ سائیں کی تعریف کرتا رہا کہ یا رب کس طرح تم نے چیری کو اتنا پیارا رنگ دیا ہے، پھر کیمرہ نکال کر مختلف اینگلز سے تصاویر بناتا رہا جب تک چیری کے درختوں کا مالک یا پھر میزبان آیا اور چیری پیش کی کہ جناب یہ کھا کر دیکھیں۔ اور یہ بھی کہا کہ درخت سے توڑ کر بھی کھائیں جتنا دل کرے۔ لیکن ٹریولر ایکس جانتا ہے کہ چیری کے درخت میں پھل لگنے میں کتنا وقت اور محنت لگتی ہے۔ وہ چند چیریز توڑتا ہے جتنی اُس کی ضرورت ہے ، تاکہ مالک کو نقصان نہ ہو۔
یاد رہے کہ ٹریلور ایکس نیچر سے محبت کرتا ہے ۔ اُسے ہر ایک پتے پتے ، بوٹے بوٹے اور درخت سے محبت ہے۔۔۔

اب بات کرتے ہیں ٹریولر وائے کی۔۔۔


ٹریولر وائے

ٹریولر وائے اکیلا نہیں جاتا بلکہ اپنے پورے خاندان کے ساتھ جاتا ہے، یا پھر دوستوں کے گروپ کے ساتھ۔ یہ جاتے ہی جب چیری کا درخت دیکھتا ہے تو چینختا ہے کہ:

“ اوے دیکھ چیری کے درخت”

 منی مرگ گلگت بلتستان   دنیا میں جنت کاٹکڑا

اور پھر اُس سمیت سارے دوست ، یا اُس کی فیملی کے میمبر جو چیری کے درخت پر ٹوٹتے ہیں ، اللہ کی پناہ۔۔۔

توڑتے جاتے ، کھاتے جاتے، آدھی ڈالیوں کو بھی نقصان پہنچاتے۔۔۔ اور پھر شاپر بھر کر درخت کو گنجہ کر دیتے۔۔۔
پھر راستے میں وہی شاپر والی چیری کھاتے ،آخر میں پیٹ خراب ہونے کی وجہ سے یا چیری خراب ہونے کی وجہ سے وہ چیری پھینک دی جاتی۔۔۔

اس سے ماحول کو نقصان پہنچا، جس کے درخت تھے اُن کے مالکان کو نقصان پہنچا۔ کیونکہ گلگت بلتستان کے لوگ اخلاق کے اچھے ہوتے ہیں تو کچھ کہتے ہیں۔۔۔

جائیں ضرور جائیں۔ چیری کھائیں ، دل بھر کر کھائیں۔ لیکن نقصان نہ کریں

ایک اچھے انسان ایک اچھے ٹریولر بنیے۔ تاکہ وہاں سے واپس آنے کے بعد وہاں کے لوگ آپ کو اچھے الفاظ میں یاد رکھیں۔۔۔

تحریر: مسا تالپور


admin

I am SR Haical. I am a Web Developer,Freelancer,Graphic designer,blogger,you-tuber and consultant travel. Further, i am fond to let the people aware of the latest trend techs to walk through.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.